Saturday, 9 February 2013

جماعةالدعوة اور تحریک آزادی جموں کشمیر کی طرف سے بھارتی پارلیمنٹ پر حملہ کے مبینہ ملزم کشمیری افضل گورو کی پھانسی کے خلاف پریس کلب کے باہر زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس میں طلبائ، وکلائ، تاجروں، سول سوسائٹی اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ اس موقع پرافضل گورو کے حق میں اور بھارت کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔شرکاءنے ہاتھوں میں پلے کارڈز، کتبے اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر افضل گورو تحریک آزادی کشمیر کا ہیروہے، افضل گورو کو پھانسی پوری کشمیری قوم پر حملہ ہے، کشمیریوں سے رشتہ کیالاالہ الااللہ اور سب سے بڑی نام نہاد سیکولرریاست کا چہرہ بے نقاب جیسی تحریریں درج تھیں۔اس موقع پر بھارتی پرچم بھی نذر آتش کیا گیا۔احتجاجی مظاہرہ سے تحریک آزادی جموں کشمیر کے سیکرٹری جنرل اور جماعةالدعوة سیاسی امور کے کوآرڈینیٹر حافظ خالد ولید، متحدہ طلباءمحاذ کے صدر اور المحمدیہ سٹوڈنٹس کے امیر انجینئر محمد حارث ڈار، علی عمران شاہین، ثاقب مجید ،محمد احسن و دیگر نے خطاب کیا۔ تحریک آزادی جموں کشمیر کے سیکرٹری جنرل اور جماعةالدعوة سیاسی امور کے کوآرڈینیٹر حافظ خالد ولیدنے اپنے خطاب میں کہاکہ بھارتی عدلیہ کشمیریوں کے معاملہ میں انتہائی جانبداری سے کام لے رہی ہے۔ کشمیریوں کے حق میں اٹھنے والی ہر آواز کو دبانے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔ایک طرف مقبوضہ کشمیر میں بغیر کسی جرم کے جیلوں میں بند حریت رہنماﺅں اور کارکنان کوتاحیات عمر قید کی سزائیں سنائی جارہی ہیں تو دوسری طرف افضل گورو کو بھارت میں پارلیمنٹ پر حملہ کے جھوٹے مقدمہ میں گرفتار کر کے اپنی صفائی کا موقع دیے بغیر پھانسی دے دی گئی ہے جس سے بھارت کا مذموم چہر ایک بار پھر کھل کر دنیا کے سامنے بے نقاب ہو گیا ہے۔ انہوںنے کہاکہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق ایک متنازعہ مسئلہ ہے۔ ہم سمجھتے ہیں کہ کشمیر کی آزادی کے لئے عملی طور پرجدوجہد جاری رکھنے والے سیاسی یا جنگی قیدی کی حیثیت رکھتے ہیں اور ان کے خلاف فوجداری قوانین کے تحت مقدمات چلانا یا انھیں تاحیات عمر قید یا پھانسی کی سزائیں سنانا بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے۔متحدہ طلباءمحاذ کے صدر اور المحمدیہ سٹوڈنٹس کے امیر انجینئر محمد حارث ڈار،علی عمران شاہین، ثاقب مجید ،محمد احسن و دیگر نے کہاکہ افضل گورو کوئی جرائم پیشہ شخص نہیں بلکہ وہ کشمیریوں کی تحریک آزادی کا ایک زبردست ہیروہے جس نے اپنے قومی کاز کے لئے اپنی جان کا نذرانہ پیش کیا ہے۔ پوری کشمیری وپاکستانی قوم افضل گورو سے محبت اور ان کا احترام کرتی ہے۔ انہیں پھانسی کے پھندے پر لٹکانا پوری کشمیری قوم پر حملہ ہے۔ اس عمل کو کسی طور منصفانہ قرار نہیں دیا جاسکتا۔مقررین نے کہاکہ افضل گورو کے خلاف نہ تو کھلی عدالت میں مقدمہ چلایا گیا اور نہ ہی انہیں ٹرائل کے دوران وکیل کی خدمات میسر کی گئیں بلکہ محض پولیس کی تیار کی گئی کہانی کی بنیاد پر انھیں مجرم قراردےکر پھانسی دے دی گئی ہے۔انہوںنے کہاکہ افضل گورو کو پھانسی دینے سے کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کمزور نہیں بلکہ اور زیادہ مضبوط ہو گی۔اس طرح کی حرکتوں سے مظلوم کشمیریوں کی آواز کو نہیں دبایا جاسکتا۔تحریک آزادی کشمیر جاری ہے اور جاری رہے گی۔ کشمیریوں کی ہر ممکن و مددحمایت کی جائے گی انہیں کسی صورت تنہا نہیں چھوڑا جائے گا

Protest news Karachi:

کراچی: بے گناہ افضل گرو کو پھانسی بھارتی عدالتی دہشت گردی ہے ۔ بھارتی عدلیہ مسلم دشمنی میں ہندو انتہا پسند تنظیموں سے بھی آگے نکل گئی ہے۔ بھارت اپنے اندرونی مسائل کو دبانے کے لیے کشمیریوں پر مظالم کر رہا ہے۔ افضل گرو کی پھانسی سے بھارت نے کشمیریوں پر مظالم کے نئے سلسلے کا آغاز کر دیاہے۔ پاکستان فوراً بھارتی دہشت گرد سربجیت سنگھ کو پھانسی دے۔ ان خیالات کا اظہار امیر جماعة الدعوة کراچی انجینئر نوید قمر، تحرکیک آزادی کشمیر کے خالد سیف الاسلام، مسلم لیگ (ن) یوتھ ونگ کے ڈاکٹر امیتاز پالاری، جماعة الدعوة کے حافظ کلیم اللہ، قاری امجد و دیگر نے کراچی پریس کلب کے سامنے تہاڑ جیل میں افضل گرو کی پھانسی کے خلاف کیے جانے والے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ احتجاجی مظاہرے میں مختلف شعبہ زندگی کے افراد کی بڑی تعداد موجود تھی۔ جنہوں نے ہاتھوں میں بھارت مخالف اور افضل گرو کی حمایت میں احتجاجی پلے کارڈ اور بینر اٹھا رکھے تھے۔ پروگرام کے آخر میں مظاہرین نے انجینئر نوید قمر کی امامت میں شہید افضل گرو کی غائبانہ نماز جنازہ بھی ادا کی۔ اس موقع پر رقت آمیز مناظر دیکھنے کو ملے۔ انجینئر نوید قمر نے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت اپنی سیاہ کاریوں اور ناکامیوں پر پردہ ڈالنے کے لیے بے گناہ مسلمانوں پر جھوٹے مقدمات قائم کر کے انہیں سزائیں دے رہا ہے۔ افضل گوروکو پھانسی دینے کے اس بھارتی عمل کو کسی طور منصفانہ قرار نہیں دیا جاسکتا۔ افضل گروکے خلاف نہ تو کھلی عدالت میں مقدمہ چلایا گیا اور نہ ہی انہیں ٹرائل کے دوران وکیل کی خدمات میسر کی گئیں بلکہ محض پولیس کی تیار کی گئی کہانی کی بنیاد پر انھیں مجرم قرار دےکر پھانسی دے دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے قبل بھارت ایک اور کشمیری رہنما مقبول بٹ کو بھی تہاڑ جیل میں شہید کر چکا ہے۔ افضل گروکی میت ان کے اہل خانہ کے حوالے نہیں کیا گئی کیونکہ اسے پھانسی سے قبل بہت زیادہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا تھا ۔ اگر بھارت ان شہدا کے لاشیں حوالے کر دیتا تو اس کے مظالم کے پول کھل جاتے۔ پوری کشمیری و پاکستانی قوم افضل گورو سے محبت اور ان کا احترام کرتی ہے۔ انہیں پھانسی کے پھندے پر لٹکانا کشمیریوں کی آزادی کو صلب کرنا اور ان کی جدوجہد آزادی کو دبانے کی ایک مذموم سازش ہے۔ افضل گرو پر بھارتی عدالتیں قائم کردہ الزامات کو ثابت نہیں کر سکیں۔ وہ ایک نیک اور بے گناہ نوجوان تھے پوری پاکستانی قوم ان کی جرات و بہادری پر انہیں خراج عقیدت پیش کرتی ہے۔ انجینئر نوید قمر نے کہا کہ بھارت مسلمانوں کو دیوار سے لگانے اور پاکستان کو بدنام کرنے کے لیے تمام تر جارحانہ اقدامات کو جاری رکھے ہوئے ہے جبکہ دوسری جانب پاکستان میں ایسے بھارتی جاسوس اور ایجنٹ موجود ہیں جن کے دہشت گردی اور تخریب کاری میںملوث ہونے کے ٹھوس شواہد ملنے کے باوجود تاحال ان کے خلاف کو کوئی سزا نہیں دی گئی۔ بلکہ پاکستان بھارت اور امریکہ کی خوشنودی کو حاصل کرنے کے لیے کئی خطرناک بھارتی دہشت گردوں کو رہا کر چکا ہے اور اب سربجیت سنکھ جیسے دہشت گرد کو رہا کرنے کے لیے راہیں ہموار کی جا رہی ہیں۔ انجینئر نوید قمر نے کہا کہ پاکستانی قوم کے کلیجے ٹھنڈے کرنے کے لیے حکومت بھارتی دہشت گرد سربجیت سنگھ اور پاکستانی جیلوں میں موجود تمام بھارت جاسوسوں اور تخریب کاروں کوجن کو پاکستانی عدالتوں نے دہشت گرد قرار دیا ہے فورا پھانسی دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ اگر امریکہ و بھارت یہ سمجھتے ہیں کہ وہ مظلوم مسلمانوں کی آواز اور جدوجہد کو اس طرح کے بہیمانہ اقدامات سے دبا لیں گے تو یہ ان کی خام خیالی ہے۔ مسلمانوں کے جذبات کبھی قربانیوں اور شھادتوں سے پست نہیں بلکہ ہمیشہ بلند ہوئے ہیں۔ مظلوم کشمیریوں کا بہنے والا خون کبھی رائیگاں نہیں جائے گا۔ وہ دن قریب ہے جب بھارت کو ان مظالم کا حساب دینا پڑے گا۔ تحریک آزادی کشمیر کے رہنما خالد سیف الاسلام نے اپنے خطاب میں کہا کہ بھارتی عدلیہ مسلمانوں کے خلاف انتہائی جانبداری اور ناانصافی سے کام لے رہی ہے۔ کشمیریوں کے حق میں اٹھنے والی ہر آواز کو دبانے کی کوششیں میں بھارت اب تک سینکڑوں بے گناہ کشمیری نوجوانوں کو جھوٹے مقدمات میں ملوث کر کے ماورائے عدالت شہید کر چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بغیر کسی جرم کے جیلوں میں بند ہزاروں نوجوانوں کو رہائی یا انصاف دلانے کے لیے کوئی قانونی تقاضے پورے نہیں کرنے دیئے جاتے۔ آج بھی کشمیرکی ہزاروں مائیں اپنے بچوں کو تلاش کر رہی ہیں لیکن ان کو اس بات کا علم نہیں کہ ان کا بچہ کس عقوبت خانے میں بھارت کے وحشیانہ مظالم سہ رہا ہے

Shaheed Afzal Guru

"Think not of those who are killed in the Way of Allah as dead. Nay, they are alive, with their Lord, and they have provision." – Holy Qur’an - 



Martyrdom of Innocent Afzal Guru by Judicial Terrorism has unveiled the deep confusions within India over Kashmir ; hence more tyranny - Every martyr of Kashmir has strengthened the struggle, every act of tyranny has weakened India. Afzal Guru will be the beacon of Azaadi and we will stand with Kashmiris in these testing times and ensure their voice is heard. Peaceful protests throughout the country in solidarity





Monday, 17 December 2012

Historic Speech of Prof.Hafiz Saeed at Wagah Border - MUST SEE & SHARE

Sunday, 23 September 2012

JuD Faisalabad: Mobile rallies and protest take place in different towns of Faisalabad today.





uD Lahore: Protest by Deaf & Dumb brothers..




Hajj terbiati programs, 3rd workshop successfully conducted in Karachi.

کراچی: جماعة الدعوة کراچی کے زیر اہتمام تیسرا حج تربیتی کورس اتوار کو جامع مسجد نمرہ نارتھ ناظم آباد میں ہوا۔ جس میں حج کے لئے جانے والے خوش نصیب افراد کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ سالوں کی طرح امسال بھی جماعة الدعوة کے زیر اہتمام ملک بھر میں جید علماءکی زیر نگرانی حج تربیتی کورس کا سلسلہ جاری ہے۔ کراچی می
ںتیسرا کورس جامع مسجد نمرہ نارتھ ناظم آباد میں فاضل مدینہ یونیورسٹی الشیخ مفتی یوسف طیبی کے زیر نگرانی ہوا۔ حج تربیتی کورس پروجیکٹر پر ارض مقدس کے نقشے، تصاویر اور ویڈیو کی مدد سے کروایا گیا تاکہ شرکاءحج کے مناسک آسانی سے سمجھ سکیں۔ جامعہ الدراسات الاسلامیہ کے مدیر الشیخ یوسف طیبی نے حج کی فضیلت و اہمیت بیان کرنے کے بعد شرکاءکو حج کے ارکان، مناسک اور حج کو فاسد کردینے والے امور سے آگاہ کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ کورس منعقد کرنے کا مقصد یہ ہے کہ مسلمان اس مقدس فریضہ کی تکمیل قرآن و حدیث کی روشنی میں کرسکیں

Saturday, 22 September 2012

‫قومی مجلس مشاورت کے زیر اہتمام26ستمبر کو ہونے والی’ ’آل پارٹیز کانفرنس بسلسلہ تحفظ حرمت رسول “کے دعوت نامے جاری کر دیے گئے ہیں۔

‫قومی مجلس مشاورت کے زیر اہتمام26ستمبر کو ہونے والی’ ’آل پارٹیز کانفرنس بسلسلہ تحفظ حرمت رسول “کے دعوت نامے جاری کر دیے گئے ہیں۔آل پارٹیز کانفرنس مذہبی و سیاسی جماعتوں کی جانب سے مشترکہ طور پر کی جارہی ہے ۔الداعیان میں سیدمنور حسن، مولانا سمیع الحق،مولانا فضل الرحمن،صاحبزادہ ڈاکٹر ابوالخیر محمد زبیر، پروفیسر حافظ محمد سعیداور جنرل (ر) حمید گل شامل ہیں۔قومی مجلس مشاورت کی طرف سے وزیر اعظم پاکستان ر
اجہ پرویز اشرف، پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سربراہ میاں محمد نواز شریف،راجہ ظفر الحق، چوہدری شجاعت حسین،عمران خان،قاضی حسین احمد، سینٹر رضا ربانی،چوہدری نثار علی خان،اسفند یار ولی خان، اعجاز الحق،سردار طلال اکبر خان بگٹی، پیر صبغت اللہ شاہ راشدی،بشیر احمد بلور،میر ظفر اللہ خان جمالی،آفتاب احمد شیر پاﺅ،جاوید ہاشمی،مخدوم شاہ محمود قریشی، صاحبزادہ حاجی محمد فضل کریم،سردار خالد ابراہیم،سردار عتیق الرحمان، سینیٹر طلحہ محمود،مشاہد حسین سید،سردارمحمد اویس لغاری،غلام مصطفیٰ جتوئی، حامد ناصر چٹھہ،جنر ل(ر) مرزامحمد اسلم بیگ اور جسٹس(ر) محمد رفیق تارڑ سمیت ملک بھر کی تمام مذہبی و سیاسی جماعتوں اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات کو دعوت نامے بھجوائے گئے ہیں۔دعوت نامے میں لکھا گیا ہے کہ اہل مغرب نے قرآن پاک کی بے حرمتی اور آقائے دوجہاںحضرت محمد کی شان اقدس میں گستاخیاں شروع کر رکھی ہیں ۔ توہین آمیز خاکوں کی اشاعت کے بعد اب گستاخانہ فلم کی وجہ سے پوری امت مسلمہ کے دل زخموں سے چور ہیں۔ ان حالات میں ضرورت اس امر کی ہے کہ تمام مذہبی و سیاسی جماعتیں ایک پلیٹ فارم پر جمع ہوکرشان رسالت کے حوالہ سے ہونے والی گستاخیاں روکنے کیلئے متفقہ لائحہ عمل ترتیب دے کردنیا کو مضبوط پیغام دیں۔آل پارٹیز کانفرنس اسلام آباد میں منعقد کی جارہی ہے

Complete news JuD khi rally:



کراچی: شیطانی فلم کے خلاف احتجاجی مہم معافی نہیں ذمہ داران کو سزائے موت دیئے جانے تک جاری رہے گی ۔ یورپی و امریکی ممالک نے توہین رسالت کرکے مسلمانوں کو جہاد کا جواز فراہم کردیا ہے۔ مسلم ممالک اقوام متحدہ کی رکنیت ختم کرکے اپنی مسلم اقوام متحدہ بنائی جائے۔ اسلام مسلمانوں کی املاک کو نقصان پہنچانے کی ہرگز اجازت نہیں دیتا۔ ان خیالات کا اظہار دینی جماعتوں کے رہنماﺅں نے جم
اعة الدعوة کی حرمت رسول ﷺ ریلی کے ہزاروں شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ شرکاءنے حرمت رسول کے لیے کٹ مرنے اور اپنی اولاد، مال کو قربان کرنے کا عزم کیا۔ سفاری پارک سے شروع ہونے والی ریلی کے شرکا نمائش چورنگی میں جلسہ کے بعد پرامن منتشر ہوگئے۔ جماعةالدعوةکراچی کی جانب سے توہین رسالت پر مبنی امریکی فلم کے خلاف گذشتہ روز سفاری پارک تا نمائش چورنگی تک تاریخی حرمت رسول ﷺ ریلی نکالی گئی جس میں کراچی کے تمام اسکولز، کالجز، یونیورسٹیز کے ہزاروں طلباءسمیت وکلائ، تاجروں ، سول سوسائٹی اورتمامتر مکاتب فکر اور شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کی بہت بڑی تعداد نے شرکت کی۔ حرمت رسول ریلی میں شریک ہونے والے شمع رسالت کے پروانوں میں ملعون ٹیری جونز اور یہودی فلمساز کی گستاخیوں پر زبردست غم و غصہ دیکھنے میں آیا۔ شرکاءکی جانب سے غیرت ایمانی کا مظاہرہ کرتے ہوئے امریکہ، اسرائیل اور بھارت کے خلاف سخت نعرے بازی کی گئی۔سفاری پارک سے نمائش چورنگی تک پورا یونیورسٹی روڈاور گردونواح کے علاقے حرمت رسول ﷺ پر جان بھی قربان ہے کے فلک شگاف نعروں سے گونج اٹھے۔ شرکاءنے ہاتھوں میں پلے کارڈز، کتبے اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر گستاخان رسول ﷺ کا ایک علاج الجہاد الجہاد،غلامی رسول میںموت بھی قبول ہے، گستاخان رسول ﷺ کے خلاف جنگ ‘جماعةالدعوة کے سنگ جیسی تحریریں درج تھیں۔ جماعةالدعوةکے مقامی ذمہ داران موٹر سائیکلوں ، کاروں، بسوں اور ویگنوں پر محبان رسولﷺ کو لیکر قافلوں کی شکل میں سفاری پارک پہنچے جہاں خطبہ جمعہ کے بعد سہ پہر تین بجے حرمت رسول ریلی شروع کرنے کا اعلان کیا گیا تھا لیکن ملعون امریکی پادری ٹیری جونز اور سام بسائل نامی یہودی کی خلاف کئے گئے ریلی میں شرکت کیلئے محبان رسول ﷺ کے جوش و خروش کا اندازہ اس امر سے لگایا جا سکتا ہے کہ دوپہر بارہ بجے سے ہی لوگوں نے یونیورسٹی روڈ پر پہنچنا شروع کر دیا ۔حرمت رسول ریلی شروع ہونے تک ایک بہت بڑا جم غفیرسفاری پارک جامعہ الدراسات کے سامنے جمع ہو چکا تھا۔ حرمت رسول ریلی میں شرکت کے لئے قافلوں کی آمد کا سلسلہ جا ری تھا کہ رش بہت زیادہ بڑھ جانے کے باعث ریلی کا آغاز کر دیا گیا۔ ہزاروں شرکاءانتہائی سبک رفتار میں چلتے ہوئے نیپا چورنگی اور حسن اسکوائر سے ہوتے ہوئے نمائش چورنگی کی طرف بڑھنا شروع ہوئے تو دور دور تک ہر طرف سر ہی سر نظر آرہے تھے شرکاءکی اکثریت نے ہاتھوں میں کلمہ طیبہ والے پرچم بھی اٹھا رکھے تھے جن کے لہرانے سے یونیورسٹی روڈ پر زبردست منظر دیکھنے میں آیا۔ حرمت رسولریلی کی سکیورٹی کے فرائض جماعة الدعوة کے رضاکاروں نے سرانجام دیے جو ریلی کے آغاز سے اختتام تک سڑک کے دونوں سائیڈوں پر پورے مجمع کو گھیرے میں لے کر ساتھ ساتھ چلتے رہے۔ ریلی میں ہزاروں نوجوانوں کے علاوہ ننھے بچوں اور بزرگوں کی بڑی تعداد بھی شریک تھی۔محبان رسول نے اپنے ماتھوں اور بازوں پر پٹیاں باندھ رکھی تھیں جن پر کلمہ طیبہ اور حرمت رسول پر جان بھی قربان ہے لکھا ہو اتھا۔ ریلی کے شرکا کے لیے جگہ جگہ ٹھنڈے پا نی اور شربت کی سبیلیں لگائی گئیں تھیں۔ حرمت رسول مارچ کی قیادت امیر جماعةالدعوة کراچی انجینئر نوید قمر نے کی۔حرمت رسول ریلی کے شرکاءنے گرومندر پرپرامن مارچ کیا،حرمت رسولریلی کے اختتام پر منعقدہ جلسہ عام سے جماعة الدعوة کراچی کے امیر انجینئر نوید قمر ، دفاع پاکستان کونسل کے حافظ کلیم اللہ، ملی یکجہتی کونسل کے محمد بلال حیدر، تحریک حرمت رسول ﷺ کے حافظ محمد امجدو دیگر نے خطاب کیا۔جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے انجینئر نوید قمر نے کہا کہ امریکی و یورپی ممالک نے عراق افغانستان اور دیگر مسلم خطوں میں لاکھوں مسلمانوں کا خون بہایا مسلمانوں نے اس کو برداشت کر لیا ،لیکن نبی اقدس کی شان میں ہونے والے ہرزہ سرائی کو کوئی بھی مسلمان برداشت نہیں کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کی جانب سے یوم احتجاج کا منانا احسن اقدام ہے لیکن ناکافی ہے ، اس وقت صرف پاکستان کو نہیں بلکہ دنیا میں موجود تمام مسلم ممالک احتجاجا اقوام متحدہ سے الگ ہو کر اپنی مسلم اقوام متحدہ بنائیں اور تمام مغربی و یورپی ممالک کے سفارتی عملے کو مسلمانوں کو ملک بدر کیا جائے اور مسلم ممالک کے سفارتی عملے کو ان ممالک سے واپس بلا کر تمام تعلقات اور معاہدے ختم کیے جائیں۔ انجینئر نوید قمر نے کہا کہ توہین اسلام پر مبنی ایسی حرکتوں پر امریکہ کی معافی کافی نہیں بلکہ جب تک گستاخوں کے سرتن سے جدا نہیں کر دیتے ہماری تحریک جاری رہے گی۔ان کے اس جملے پر ہزاروں افراد نے دونوں ہاتھ اٹھا کر قربانیاں و شہادتیں پیش کرنے کا عزم کیا ۔ انجینئر نوید قمر نے جماعة الدعوة کی جانب سے تحفظ حرمت رسول کی ملک گیر تحریک جاری رکھتے ہوئے26ستمبر کو لاہور میں آل پارٹیز کانفرنس اور 7اکتوبر کو کراچی میں ملین مارچ کا اعلان کر دیاہے ۔انھوں نے پورے ملک میں احتجاجی مظاہروں، ریلیوں اور حرمت رسول ﷺ کانفرنسوں کا سلسلہ جاری رکھنے کے عزم کے ساتھ ساتھ جلاﺅ گھیراﺅ اور نجی و سرکاری املاک کو نقصان پہنچانے کی بھی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پرتشدد مظاہروں سے کفار کو کچھ نہیں ہو گا بلکہ ایسا کرنے سے ہم عوام کو تکلیف اور ملک کو نقصان پہنچائیں گے۔انہوں نے کہا کہ اپنے جذبات کا رخ کافروں کی طرف کریں اور جہادی میدانوں میں ان سے بدلہ لیا جائے۔ دفاع پاکستان کونسل کے مولانا حافظ کلیم اللہ نے اپنے خطاب میں کہا کہ قرآن پاک کی بے حرمتی اور نبی اکرم کی شان میں ( نعوذ باللہ) بدزبانی کرنا دنیا کی سب سے بڑی دہشت گردی ہے ۔ اگر صلیبی و یہودی گستاخیوں کا ارتکاب کریں گے تو پھر مسلمان ان شاءاللہ ان کی اس دہشت گردی کیخلاف جہاد کا راستہ اختیار کریں گے ۔ریلی کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے ملی یکجہتی کونسل کے صوبائی ڈپٹی سیکریٹری محمد بلال حیدر نے کہا کہ امت مسلمہ کو ایمانی غیرت کا مظاہرہ کرتے ہوئے شدید رد عمل ظاہر کرنا چاہیے ۔دنیا دیکھ لے کہ مسلمانوں نے سروں پر کفن باندھ لئے ہیں، اور گستاخان رسول کے سروں کی فصل جوپک کر تیار ہو چکی ہے اس کو کاٹنے کا عزم کر لیا ہے۔

 
Design by Lashkar E Islam | Developed by Lashkar E Islam - E-mail | Lashkar E Islam